Published 2 months ago in Naats

Jo Lamhe They

  • 7
  • 0
  • 0
  • 0
  • 0
  • 0

Jo Lamhe They is a beautiful naat. It is recited by Syed Awais Raza Qadri. Here you can download this track. You can read lyircs

Syed Awais Raza Qadri

Syed Awais Raza Qadri is a famous male naat reciter. He belongs from Pakistan. He is the one of Top Sana Khan e Mustafa PBUH. He has recited many naats, nasheed and Hamd in the parise of Allah Almight and Prophet Muhammad PBUH. We have collected 1 tracks in his enchanting voice. Jo Lamhe They is one of his famous naats.
In this page you can listen his beautiful audio track Jo Lamhe They. You can download this track free of cost. Jo Lamhe They lyrics has been written bellow. So, without further ado scroll down and enjoy the beautiful lyrics.


How to Download Jo Lamhe They Mp3
> Go to Track Actions Section.
>Click on Download Button.
Note: Login Not required to Download. It is Free of Cost.

Jo Lamhe They Lyrics

Jo Lamhe Thay Sukoon Ke sab Madine mein guzar aye naat lyrics

Madina Madina Hamra Madina
Madina Madina Hamra Madina
Jo Lamhe Thay Sukoon Ke sab Madine mein guzar aye X4
Dil e muztar watan men ab tujhy kesy qarar aye X2



Khizan Ko Hukam Hai Dakhil na ho Taiba Ki GaliyoN mein
Ijazat Hai Naseem Aye Saba Aye Bahar Aye
Jo Lamhe Thay Sukoon Ke sab Madine mein guzar aye X2

Wo basti ahle Dil aur dewaano ki basti hai X2
Gaye jitny khirad nazan wo Daman taar taar aye X2
Jo Lamhe Thay Sukoon Ke sab Madine mein guzar aye X2

Jabeen ho un ke dar per hath mein roze ki jali ho
Ye lamhe Zindagi mein ae khuda phir baar bar ayen
Jo Lamhe Thay Sukoon Ke sab Madine mein guzar aye X2

Qalam jab se howa hai kham adeeb aaqa ki midhat mein
Bare rangeen howe mazmon bare naqsho nigar aye
Jo Lamhe Thay Sukoon Ke sab Madine mein guzar aye X2
Dil e muztar watan men ab tujhy kesy qarar aye

Jo Lamhe They: Lyrics in Urdu

جو لمحے تھے سکوں کے سب مدینے میں گزار آئے
دل مضطر وطن میں اب تجھے کیسے قرار آئے
خزاں کو حکم ہے داخل نا ہو طیبہ کی گلیوں میں
اجازت ہے نسیم آئے صبا آئے بہار آئے
جو لمحے تھے سکوں کے سب مدینے میں گزار آئے
دل مضطر وطن میں اب تجھے کیسے قرار آئے
مدینہ مدینہ ہمارہ مدینہ
وہ بستی اہل دل کی اور دیوانوں کی بستی ہے
گئے جتنے خرد نازاں و امن تار تار آئے
جو لمحے تھے سکوں کے سب مدینے میں گزار آئے
دل مضطر وطن میں اب تجھے کیسے قرار آئے
مدینہ مدینہ ہمارہ مدینہ
جبیں ہو ان کے در پر ہاتھ میں روضے کی جالی ہو
یہ لمحے زندگی میں اے خدا پھر بار بار آئے
جو لمحے تھے سکوں کے سب مدینے میں گزار آئے
دل مضطر وطن میں اب تجھے کیسے قرار آئے
مدینہ مدینہ ہمارہ مدینہ
قلم جب سے ہوا ہے خم ادیب آقا کی مدحت میں
بڑے رنگیں ہوئے مضموں بڑے نقش و نگار آئے
جو لمحے تھے سکوں کے سب مدینے میں گزار آئے
دل مضطر وطن میں اب تجھے کیسے قرار آئے
مدینہ مدینہ ہمارہ مدینہ
مدینہ مدینہ ہمارہ مدینہ)

:
/ :

Queue

Clear